Home / اہم خبریں / مرزا غالب کا 222 واں یومِ پیدائش آج منایا جارہا ہے
مرزا غالب کا 222 واں یومِ پیدائش آج منایا جارہا ہے

مرزا غالب کا 222 واں یومِ پیدائش آج منایا جارہا ہے

مرزا اسد اللہ خان غالب نے دیوان کے ڈھیر لگانے کی بجائے بہترین شاعری کے حامل چند ہزار اشعار کہے ہیں اور ان کے خطوط کو بھی اردو ادب میں خاص درجہ حاصل ہے۔

اس طرح مرزا غالب کے خطوط کو نثری ادب کا شاہکار سمجھا جاتا ہے۔ آپ کا پورا نام مرزا اسداللہ بیگ تھا اور غالب تخلص تھا لیکن اپنے نام اسد کو بھی انہوں نے بعض غزلوں میں بطور تخلص استعمال کیا ہے مثلاً۔ غمِ ہستی کا اسد کس سے ہو جزو مرگ علاج۔
27 دسمبر 1979ء کو مرزا غالب کالا محل، آگرہ میں پیدا ہوئے اور آپ کے والد کا نام عبداللہ بیگ اور والدہ کا نام عزت النسا بیگم تھا۔ 13 برس کی عمر میں آپ کی شادی امراؤ بیگم سے ہوئی لیکن غالب کی کوئی اولاد بھی پیدائش کے بعد جانبر نہ رہ پائی۔ ان سانحات کا غالب کی طبعیت پر گہرا اثر ہوا اور اس کا رنگ شاعری میں بھی نماٰیاں رہا۔

مرزا غالب کی شاعری میں انسانی معاملات، نفسیات، فلسفہ، کائناتی اسلوب اور دیگر موضوعات ملتے ہیں۔

غالب کی شاعری اور نثر نے اردو ادب پر گہرے نقوش چھوڑے اور انہوں نے فارسی اسلوب کے علاوہ سنجیدہ اور سلیس زبان میں بھی نہایت گہرے اشعار پیش کیے۔ اس ضمن میں دیوانِ غالب کئی اشعار سے بھرا ہوا ہے۔ غالب زندگی بھر تنگ دستی اور غربت کے شکار رہے

About admin

اپنا پیغام دیں

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Scroll To Top