Home / اہم خبریں / پی ڈی ایم کا 30 نومبر کو ہر صورت ملتان میں جلسہ کرنے کا اعلان۔حکومت رکاوٹ بنی تو دما دم مست قلندر ہوگا،رہنما
پی ڈی ایم کا 30 نومبر کو ہر صورت ملتان میں جلسہ کرنے کا اعلان۔حکومت رکاوٹ بنی تو دما دم مست قلندر ہوگا،رہنما

پی ڈی ایم کا 30 نومبر کو ہر صورت ملتان میں جلسہ کرنے کا اعلان۔حکومت رکاوٹ بنی تو دما دم مست قلندر ہوگا،رہنما

پی ڈی ایم قیادت کا 30 نومبر کو ہر صورت ملتان میں جلسہ کرنے کا اعلان،حکومت رکاوٹ بنی تو ہر چوک پر جلسہ اور دما دم مست قلندر ہوگا۔اپوزیشن رہنما

عوام کی طاقت کے آگے کوئی کھڑا نہیں ہو سکتا، گرفتاریاں ہوئیں تو ہر شہر، شہر جلسے ہوں گے،سابق وزیراعظم یوسف رضا گیلانی کا رکنان سے خطاب،،،،،گیلانی کا بلاول اور مولانا فضل الرحمن سے بھی ٹیلی فونک رابطہ،ملتان جلسہ کے حوالہ سے تبادلہ خیال

جلسے کرنا ہمارا جمہوری حق ہے،اجازت ملے نہ ملے 30 نومبر کو پی ڈی ایم کا جلسہ ہرصورت ہوگا،علی قاسم گیلانی، پیپلز پارٹی کے رہنماؤں کی میڈیا سے گفتگو


ملتان………پی ڈی ایم کی قیادت نے 30 نومبر کو ہر صورت ملتان میں جلسہ کرنے کا اعلان کردیا۔اپوزیشن رہنماؤں کا کہنا ہے کہ جلسے کرنا ہمارا جمہوری حق ہے،اگر حکومت رکاوٹ بنی تو پھر جنوبی پنجاب کے ہر چوک پر جلسہ ہوگا اور دمادم مست قلندر ہوگا۔

30 نومبر کے پی ڈی ایم ملتان جلسہ کی میزبان پیپلز پارٹی کے سینئر راہنما و سابق وزیراعظم سید یوسف رضا گیلانی کا کہنا ہے کہ کہ پی ڈی ایم کا جلسہ 30 نومبر کو ملتان میں ہر صورت ہوگا،حکومت گرفتاریاں،کنٹینرز لگا کر راستے بند کرنیاور جلسے کو روکنے کے اقدامات کر کے شرمندہ نہ ہو،

جلسہ کی تیاریوں کے سلسلے میں مختلف کارنر میٹنگز سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ رکاوٹوں اور اجازت نہ دینے کے باوجود بھی پشاور میں شاندار تاریخی جلسہ ہوا ہے،ملتان میں بھی جلسہ ہوگا، عوام کی طاقت کے آگے کوئی کھڑا نہیں ہو سکتا، گرفتاریاں ہوئیں تو ہر شہر، شہر جلسے ہوں گے۔ملتان کا جلسہ تاریخی اہمیت کا حامل ہوگا،

سابق وزیراعظم سید یوسف رضاگیلانی نے چئیرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری اور پی ڈی ایم کے سربراہ مولانا فضل الرحمن سے بھی ٹیلی فونک رابطہ کیا،گیلانی ہاؤس میڈیا سیل کے مطابق سابق وزیراعظم یوسف رضا گیلانی نے چئیرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹوزرداری اور مولانا فضل الرحمن سے ملتان جلسہ کے حوالے سے تبادلہ خیال کیا۔

دریں اثناء پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما اور پی ڈی ایم ملتان جلسہ کے چیف کوآرڈینیٹر سید علی قاسم گیلانی کا کہنا ہے کہ 30 نومبر کو قلعہ قاسم باغ اسٹیڈیم میں پی۔ڈی۔ایم کا جلسہ ہو کر رہے گا کیونکہ کرونا ایس او پیز کے تحت جلسہ کرنا ہمارا جمہوری حق ہے اور اگر حکومتی ایماء پر مقامی انتظامیہ اجازت نہ دینے پر بضد رہی تو پھر جنوبی پنجاب کے ہر چوک پر جلسہ ہوگا اور دمادم مست قلندر ہوگا

ان خیالات کا اظہار انہوں نے پارٹی کے سینئر نائب صدر پیپلز پارٹی جنوبی پنجاب خواجہ رضوان عالم، ایم۔این۔اے نوابزادہ افتخار احمد خان، ڈویژنل صدر خالد حنیف لودھی، مسلم لیگ(ن) کے ضلعی صدر بلال بٹ، ڈویژنل جنرل سیکرٹری پیپلز پارٹی و سابق ممبر صوبائی اسمبلی ڈاکٹر جاوید صدیقی، ضلعی جنرل سیکرٹری پیپلز پارٹی راؤ ساجد علی، سٹی صدر پی۔پی۔پی ملک نسیم لابر، پی۔ایل۔ایف جنوبی پنجاب کے صدر شیخ غیاث الحق ایڈووکیٹ،

صدر پی۔ایس۔ایف جنوبی پنجاب سید عارف شاہ، ڈویژنل سیکرٹری انفارمیشن ایم سلیم راجہ، ضلعی سیکرٹری انفارمیشن چوھدری یاسین، ضلعی ڈپٹی سیکرٹری انفارمیشن رئیس الدین قریشی، سٹی ڈپٹی سیکرٹری انفارمیشن خواجہ عمران، سینئر نائب صدر شعبہ خواتین جنوبی پنجاب راضیہ رفیق، ضلعی رابطہ سیکرٹری عبد الروف لودھی، سٹی نائب صدر نعیم بھٹی، سٹی ڈپٹی جنرل سیکرٹری حاجی امین ساجد و دیگر پارٹی عہدیداران کے ہمراہ ضلع کچہری میں ڈی۔سی ملتان سے جلسہ کی اجازت بارے کئے گئے مذاکرات کے بعد میڈیا ٹاک کرتے ھوئے کیا

اور کہا کہ ہم نے ڈی۔سی ملتان کو یقین دھانی کروائی ہے کہ 30 نومبر کو پی۔ڈی۔ایم کے ملتان جلسہ میں کرونا احتیاطی تدابیر پر مکمل عملدرآمد یقینی بنائیں گے اور جلسے کے شرکاء کو ماسک فراہم کئے جائیں گے جبکہ جلسہ گاہ (قلعہ قاسم باغ اسٹیڈیم) کے انٹری گیٹ پر ہینڈ سینیٹائزر کا باقاعدہ اہتمام کیا جائے گا جس کیلئے پیپلز پارٹی آرڈرز پر 50 ہزار ماسک تیار کروارہی ہے اور ن لیگ سمیت پی۔ڈی۔ایم میں شامل دوسری جماعتیں بھی ماسک تیار کروا رہی ہیں اور ہم اپنے کارکنوں کو بھی ماسک پہن کر جلسہ میں شریک ہونے کی ھدایات کررہے ہیں اور عوام سے بھی اپیل کررہے ھیں

اور ہم امید کرتے ہیں کہ انتظامیہ پی۔ڈی۔ایم ملتان جلسہ میں کسی قسم کی کوئی رکاوٹ پیدا نہیں کرے گی اور امید کرتے ہیں کہ حکومت کسی قسم کے اوچھے ہتھکنڈوں سے اجتناب کرتے ھوئے ہمارے جلسہ میں رکاوٹ نہیں بنے گی جبکہ سیکیورٹی فراہم کرنا اور ٹریفک پلان ترتیب دینا حکومت کی اولین ذمہ داری ہے۔

سید علی قاسم گیلانی نے مزید کہا کہ ڈی۔سی ملتان سے مذاکرات کے بعد ہمیں جلسہ کرنے کی اجازت کی امید ابھی باقی ہے لیکن اجازت ملے نہ ملے 30 نومبر کو پی۔ڈی۔ایم کا جلسہ ہرصورت ہوگا کیونکہ پاکستان پیپلز پارٹی اپنا 53 واں یوم تاسیس مناتے ہوئے پی۔ڈی۔ایم کا جلسہ ضرور کرے گی جس کیلئے جیالے کارکن پرجوش ہیں اور ہر قسم کی قربانی دینے کیلئے تیار ہیں۔

About admin

اپنا پیغام دیں

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Scroll To Top