Home / کالمز و فیچرز / خود فیصلہ کرو۔۔از ۔ماجد رضا
خود فیصلہ کرو۔۔از ۔ماجد رضا

خود فیصلہ کرو۔۔از ۔ماجد رضا

اپنی کہیں یا تم سے سنیں خود فیصلہ کرو
کچھ بولیں بھی یا چپ ہی رہیں خود فیصلہ کرو
یہ پل,وہ کل؟ یا آنے والے کچھ برس
تم تھی, تم ہو, تم رہو خود فیصلہ کرو
ہم نے سینچے ہیں غم حیات کے سبھی درد
کی تم نے کب مسیحائی خود فیصلہ کرو
آؤ کہ گل میں ہے بہاروں کے چمنزار
خزاں میں غنچوں کو کس نے چھوڑا خود فیصلہ کرو
میرے قریب رہ کر مجھ سے رہے ناواقف
رمز خاموشی کون جھٹلائے خود فیصلہ کرو
یہ جو مسکراہٹیں بکھیریں اندھیری راتوں میں
کس کے دل کے دیب جلائے خود فیصلہ کرو
ہم نا کریں گے تم سے گلا ہم تو رہے ہیں باوفا
عشق کے اسباق کس نے بھلائے خود فیصلہ کرو
آنسوؤں میں لپٹیں ہیں تیری یادوں کے لمحات
آنکھوں میں ہے کس کا خیال خود فیصلہ کرو

About admin

اپنا پیغام دیں

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Scroll To Top